21 سال سے کم عمر افراد سگریٹ نہیں خریدسکیں گے

امریکی ریاست کیلیفورنیا میں تمباکو نوشی کے لیے کم از کم عمر کو 18 سال سے بڑھا کر 21 کردیا گیا ہے۔ ریاست کے گورنر جیری براؤن نے کہا ہے کہ انہوں نے اس فیصلے پر دستخط کردیے ہیں جس کے ساتھ مختلف طریقوں سے تمباکو کے چار دیگر استعمالات کو بھی محدود کیا گیا ہے۔

انسٹیٹیوٹ آف میڈسن کا کہنا ہے کہ روزانہ تمباکو نوشی کرنے والے 90 فیصد افراد 19 سال سے قبل اس لت میں مبتلا ہوتے ہیں۔ ابھی پچھلے مہینے ہی ہوائی امریکا کی پہلی ریاست بنا تھا کہ جہاں تمباکو نوشی کے لیے کم از کم عمر 21 سال مممقرر کی گئی تھی جبکہ ملک میں 100 سے زيادہ دیگر مقامات پر بھی ایسے ہی فیصلے کیے گئے جن میں نیو یارک، شکاگو اور سان فرانسسکو بھی شامل ہیں۔

نئے قانون کے تحت 21 سال یا اس سے کم عمر افراد کو سگریٹ یا تمباکو کی مصنوعات فروخت کرنے والے کو بھی مجرم تصور کیا جائے گا۔ یعنی 18 سے 20 سال کے افراد اب 9 جون سے کیلیفورنیا سگریٹ یا تمباکو کی دیگر مصنوعات نہیں خرید سکیں گے۔

مخالفین کا کہنا ہے کہ جس عمر میں بندہ فوج میں بھرتی ہوکر ملک کے لیے جان دے سکتا ہے، اس عمر میں اسے تمباکو کے استعمال کی اجازت بھی ہونی چاہیے۔ امریکا میں 18 سال کی عمر کے نوجوان فوج میں بھرتی ہو سکتے ہیں۔

بہرحال، تمباکو نوشی کے مخالف گروپ یہ مطالبہ بھی کر رہے ہیں کہ ایک پیکٹ سگریٹ پر ٹیکس 0.87 ڈالرز سے بڑھا کر 2 ڈالرز کردیا جائے۔

فیس بک پر تبصرے



تبصرہ کریں