ماہر یا جعل ساز؟

ماہرین اور جعل سازوں کے درمیان فرق یہ ہوتا ہے کہ ماہرین کو بہت زیادہ معلومات نہیں ہوتیں جبکہ جعل ساز سب کچھ جانتے ہیں یا کم از کم اس کی اچھی اداکاری کر لیتے ہیں۔ ماہرین زچ کردیتے ہیں۔ وہ معلومات کے خزانوں پر بیٹھے ہوتے ہیں اور کہتے ہیں کہ ابھی بہت کچھ دریافت کرنا باقی ہے! وہ اپنی کم علمی کا اقرار کرتے ہیں اور بولتے بھی ہیں تو کم اور محدود الفاظ استعمال کرکے۔

ایک سائنس دان کا لطیفہ ہے کہ ان کے گھر میں چوری ہوگئی، پولیس نے ملزمان پکڑے اور ان کے سامنے شناخت پریڈ کے لیے پیش کیے۔ موصوف نے ایک شخص کو دیکھا اور کہا کہ "میری بہترین معلومات کے مطابق یہ وہ بندہ ہے۔" پولیس نے پوچھا کہ آپ کو 100 فیصد یقین کیوں نہیں؟ انہوں نے کہا کیونکہ میں کسی بھی چیز کے بارے میں 100 فیصد یقین نہيں رکھتا۔

عام لوگ اس طرح نہیں سوچتے اور نہ بولتے ہیں اور جعل ساز بھی ایسے ہی ہوتے ہیں۔ ہمیں انٹرنیٹ کی دنیا میں جا بجا ایسی چیزیں نظر آتی ہیں جن میں قطعیت کے ساتھ دعوے کیے جاتے ہیں، یہاں تک کہ سائنسی موضوعات پر بھی جیسا کہ موسمیاتی تبدیلی محض ایک شوشا ہے، ثابت ہوگیا! اصل سائنس دان کبھی اس طرح بات نہیں کرتے۔

جعلی ماہرین ہر موضوع پر رائے رکھتے ہیں۔ ان سے کوئی بھی سوال پوچھ لیں، یہ خاموش نہیں بیٹھ سکتے اور جواب بھی ایسا دیں گے جو ان کے خیال میں اس موضوع پر بہترین جواب ہے۔

اندازہ لگا لیں کہ یہاں پاکستان میں ماہرین کی کتنی کمی ہے لیکن اس وقت میڈیا تو کجا پوری قوم تجزیہ کار، ہر موضوع پر۔ سیاست سے لے کر کھیل تک کوئی موضوع ایسا نہیں جس پر ایک قطعی رائے ہر کسی کے پاس موجود نہ ہو۔

فیس بک پر تبصرے



تبصرہ کریں