وسیم اور انضمام کو 'لٹکا' دیتے تو اسپاٹ فکسنگ نہ ہوتی: عبدالقادر

سابق پاکستانی کرکٹر عبدالقادر نے وسیم اکرم، انضمام الحق اور مشتاق احمد پر میچ فکسنگ میں ملوث ہونے کا الزام لگاتے ہوئے کہا ہے کہ اگر ان کھلاڑیوں کو 'لٹکا' دیا جاتا تو آج اسپاٹ فکسنگ کا نام و نشان ہی نہ ہوتا۔ عبدالقادر نے یہ بات ٹیلی ویژن چینل پر پاکستان سپر لیگ 2 میں مبینہ اسپاٹ فکسنگ پر تبصرہ کرتے ہوئے کہی۔

عبدالقادر نے مزید کہا کہ 2000 میں جن دو پاکستانی کھلاڑیوں، عطالرحمن اور سلیم ملک، کو محض قربانی کا بکرا بنایا گیا۔ انہوں نے کہا کہ جب وسیم اکرم، انضمام الحق اور مشتاق احمد کو فکسنگ میں ملوث پایا گیا تو کاروائی کرنے کے بجائے ان کی پیٹھ تھپتھپائی گئی، اگر ماضی میں ایسا نہ کیا جاتا تو آج جو کچھ ہورہا ہے، وہ نہ ہوتا۔ سابق اسپنر نے مزید کہا کہ وسیم، وقار، انضمام اور مشتاق سب ہی پاکستان کرکٹ بورڈ سے وابستہ ہیں یا ماضی میں رہ چکے ہیں، ایسے میں سوال پیدا ہوتا ہے کہ جسٹس قیوم کی رپورٹ پر عملدرآمد کیوں نہیں کیا گیا۔

یاد رہے کہ پاکستان سپر لیگ 2 میں مبینہ اسپاٹ فکسنگ کی تحقیقات جاری ہے اور اس ضمن میں اب تک پانچ پاکستانی کھلاڑیوں پر جزوی پابندی عائد کی جاچکی ہے۔ ان کھلاڑیوں میں ناصر جمشید، شرجیل خان، خالد لطیف، محمد عرفان اور شاہزیب حسن شامل ہیں۔ ان کھلاڑیوں پر الزام ہے کہ مشکوک افراد نے ان کھلاڑیوں سے رابطہ کیا جس کی رپورٹ انہوں نے کرکٹ بورڈ کو بروقت نہ کی۔

فیس بک پر تبصرے



تبصرہ کریں