روزمرہ کی عادات جو آپ کی عمر کم کرتی ہیں

بے جا کھانا، ہر وقت ٹی وی دیکھتے رہنا اور صحت کے حوالے سے مختلف بے پروائیاں ویسے تو بے ضرر سی لگتی ہیں لیکن حقیقت میں یہ آپ کی زندگی کے کئی سال گھٹا دیتی ہیں۔ آئیے کچھ ایسی ہی عادات کے بارے میں آپ کو بتائیں۔

آدھی رات کو کھانا

میٹھا ہو یا نمکین، اگر آپ کو نیند سے جاگ کر کچھ نہ کچھ چرنے چُگنے کی عادت ہے تو خبردار! یونیورسٹی آف میکسیکو کی تحقیق کے مطابق اس سے دل کے امراض اور ذیابیطس کا خطرہ بڑھ جاتا ہے۔


جاگنا

بلاشبہ سوشل میڈیا کی کئی ایپس ایسی ہیں کہ جن کو چھوڑنا آسان نہیں لیکن رات کو اپنی قیمتی نیند قربان کرنا ہرگز اچھا عمل نہیں۔ ایک نئی تحقیق کے مطابق رات گئے تک اسمارٹ فون استعمال کرنے یا جاگنے والے نوجوانوں میں بے خوابی، نیند کے خراب معیار اور نیند سے پہلے سکون کے بجائے دماغ کے مکمل طور پر جاگتے رہنے کے مسائل دیکھے گئے ہیں۔ اس تحقیق نے خاص طور پر رات گئے تک مختلف ٹیلی وژن سیریز کی یکے بعد دیگرے اقساط دیکھنے کا حوالہ دیا ہے اور کہا ہے کہ 98 فیصد ایسے افراد میں نیند کا معیار عام لوگوں کے مقابلے میں کہیں زیادہ خراب ہے۔ ڈاکٹروں کا کہنا ہے کہ محض ایک رات کی نیند کی کمی بھی جسم پر بہت مضر اثرات مرتب کرتی ہے۔ اگر ایسی حرکتوں کی وجہ سے نیند کی مستقل کمی کا سامنا ہو تو بڑے امراض کے لیے تیار ہو جائیں۔


نمک کا زیادہ استعمال

اگر آپ کو ہر کھانے کی چیز پر نمک چھڑکنے کی عادت ہے تو آپ درحقیقت اپنی صحت سے کھیل رہے ہیں کیونکہ خوراک کی وجہ سے ہونے والی اموات میں سے 9.5 فیصد نمکین کھانوں کی وجہ سے ہوتی ہیں۔ امریکن میڈیسن ایسوسی ایشن کی ایک تحقیق کے مطابق بہت زیادہ نمک دل اور گردوں کو نقصان پہنچاتا ہے۔ تحقیق نے پایا کہ دل کے امراض، دوروں اور ٹائپ2 ذیابیطس کی وجہ سے ہونے والی اموات میں سے 45.4 فیصد 10 فوڈ گروپس میں موجود چیزیں بہت زیادہ یا بہت کم کھانے کی وجہ سے ہوتی ہیں۔


اچھی طرح ہاتھ نہ دھونا

اچھی طرح ہاتھ نہ دھونے سے آپ جراثیم کی زد میں آ سکتے ہیں۔ صاف ہاتھ نہ صرف کھانے سے ہونے والے امراض سے بچاتے ہیں بلکہ یو ایس سینٹرز فار ڈیزیز کنٹرول اینڈ پریوینشن کے مطابق صابن اور پانی سے اچھی طرح ہاتھ دھو لیے جائیں تو ڈائریا سے ہونے والی اموات کو بھی نصف کیا جا سکتا ہے۔


خلال نہ کرنا

مسوڑھوں کے امراض آپ کی موت کے خطرات بڑھا سکتے ہیں لیکن امریکی ماہرین دندان کے مطابق دھاگے سے دانتوں کے درمیان خلال کرنا عمر میں چھ سال تک کا اضافہ کر سکتا ہے۔ اس عمل کے نتیجے میں مسوڑھوں میں سوزش کم ہو جاتی ہیں جس سے ان سے خون رسنا بند ہو جاتا ہے اور منہ میں جراثیم گھٹ جاتے ہیں۔


ناخن چبانا

یہ نہ صرف ایک معیوب عادت ہے لیکن اس سے منہ میں جراثیم بھی چلے جاتے ہیں۔ ایسے جراثیم جو خون کے بہاؤ میں داخل ہونے کی صلاحیت رکھتے ہیں اور خون کے کسی خطرناک انفیکشن کا سبب بن سکتے ہیں۔ ماہرین کے مطابق اس بُری عادت سے ناخن کے گرد بھی سوجن ہو جاتی ہے اور پیچیدگیاں جنم لے سکتی ہیں۔


ناشتہ نہ کرنا

ناشتہ دن کا اہم ترین کھانا ہے، یہ دن بھر کے لیے آپ کو توانائی فراہم کر سکتا ہے اگر آپ اچھی کریں تو۔ ناشتہ نہ کرنے کی صورت میں آپ دن کے دیگر اوقات میں لازماً زیادہ کھانا کھائیں گے جو ماہرین کے مطابق زائد وزن ہونے کا پہلا قدم ہے اور یہ تو آپ کو معلومات ہی ہے کہ وزن زیادہ ہونا دل کے امراض اور موت کا بڑا سبب ہے۔

فیس بک پر تبصرے



تبصرہ کریں