سب کچھ یاد رکھنے کا طریقہ، سائنس کے مطابق

آخر کون ہوگا جو اپنی یادداشت کو بہتر بنانا نہیں چاہتا ہوگا؟ عمر گزرنے کے ساتھ ساتھ یادداشت کے مسائل بڑھ جاتے ہیں اور ان کی بدترین کیفیت Alzheimer اور Dementia جیسے امراض ہیں۔  ایک تحقیق میں پایا گیا ہے کہ وہ افراد جو اپنی یادداشتیں ڈرائنگ کی صورت میں محفوظ کرتے ہیں ان کی یادداشت بہتر رہتی ہے اور بڑھاپے میں ان خطرناک امراض کے خلاف مزاحمت بھی مل سکتی ہے۔

محققین کا کہنا ہے کہ لکھنے، دوبارہ لکھنے، معلومات پر ایک جامع نظر ڈالنے اور دیگر مختلف طریقوں کے مقابلے میں یاد رکھنے کا زیادہ مؤثر طریقہ ڈرائنگ بنانا ہے۔

دلچسپ بات یہ ہے کہ وہ افراد بھی جن کی ڈرائنگ اچھی نہیں، کینیڈا کی یونیورسٹی آف واٹرلو کی ٹیم کے مطابق وہ بھی اپنی صلاحیت کے مطابق ڈرائنگ کرکے یادداشت کو بہتر بنانے میں مدد لے سکتے ہیں۔

میلیسا میڈ نامی ایک سائنس دان کا کہنا ہے کہ "تحقیق میں بزرگوں میں یادداشت کو بہتر بنانے کے لیے دیگر طریقوں کے مقابلے میں ڈرائنگ کو زیادہ بہتر پایا گیا۔ ہم اس تحقیق کے نتائج سے بہت متاثر ہوئے ہیں اور اب ان طریقوں کو تلاش کر رہے ہیں جن کی مدد سے بھولنے کے مرض میں مبتلا افراد کی مدد کی جاسکے۔"

ہم تو آج سے اپنے تمام نوٹس ڈرائنگ کی صورت میں ہی لیں گے۔ کیا آپ بھی؟

فیس بک پر تبصرے



تبصرہ کریں