واٹس ایپ کا میسیج اب صرف 5 لوگوں کو ہی فارورڈ ہوگا

واٹس ایپ افواہیں پھیلانے کا ایک بڑا ذریعہ بنتا جا رہا ہے اور یہی وجہ ہے کہ گزشتہ سال جولائی میں واٹس ایپ نے بھارت میں افواہوں اور جعلی خبروں کو پھیلنے سے روکنے کی خاطر ہر میسیج کو محدود کردیا تھا کہ اسے زیادہ سے زیادہ پانچ افراد تک "فارورڈ" کیا جا سکتا ہے۔ آج واٹس ایپ نے اس پابندی کا دائرہ پھیلا دیا ہے اور اب دنیا بھر میں کوئی واٹس ایپ میسیج پانچ سے زیادہ افراد کو فارورڈ نہیں کیا جا سکتا۔

سوموار کو اپنے ایک بلاگ میں واٹس ایپ نے کہا کہ یہ قدم  محض قریبی افراد کو نجی پیغامات بھیجنے پر توجہ مرکوز رکھنے میں مدد دے گا۔ واٹس ایپ نے چھ ماہ تک قریبی جائزہ لیا اور صارفین کے فیڈبیک کے بعد فیصلہ کیا ہے کہ دنیا بھر میں میسیج فارورڈنگ کو پانچ افراد تک محدود کردیا جائے۔

واٹس ایپ کے لیے بھارت، برازیل اور انڈونیشیا سب سے بڑی مارکیٹ ہیں اور اس کا کہنا ہے کہ وہ اپنے صارفین کے فیڈ بیک کی بنیاد پر بہتریاں لاتا رہے گا اور ان کی بنیاد پر وائرل کونٹینٹ سے نمٹنے کے نئے طریقے ڈھونڈے کا۔ واضح رہے کہ اس سے قبل کوئی میسیج 20 افراد کو فارورڈ کیا جا سکتا تھا۔

بھارت میں پچھلے چند سالوں میں واٹس ایپ کے ذریعے جعلی خبروں کے بڑے پیمانے پر پھیلاؤ نے ادارے کے کان کھڑے کردیے تھے۔ چند افواہوں کے نتیجے میں تو کئی افراد جان سے بھی چلے گئے کہ جو گائے ذبح کرنے کے الزام میں عوام کے ہاتھوں جان سے گئے۔ ایسے واقعات کے بعد واٹس ایپ زبردست دباؤ میں آ گیا اور اس نےمیسیج فارورڈنگ کی حوصلہ شکنی کا آغاز کردیا۔

واٹس ایپ کا یہ قدم پاکستان میں بھی جعلی خبروں کے تیزی سے پھیلنے کے عمل کو روکنے میں مددگار ثابت ہوگا۔  

فیس بک پر تبصرے



تبصرہ کریں