قدیم گھریلو ٹوٹکے اور اُن کے جدید فائدے

ٹوٹکوں کا استعمال نانی دادی کے زمانے کی چیز سمجھا جاتا ہے اور نئی نسل بڑی حد تک ان سے دُور رہتی ہے لیکن حقیقت یہ ہے کہ ہماری روزمرہ استعمال کی کئی چیزیں ایسی خصوصیات رکھتی ہیں جن کے فائدے بہت زیادہ ہیں۔ بڑے بوڑھوں کے فوائد اپنی جگہ لیکن نئی سائنسی تحقیق نے عام گھریلو چیزوں کی کچھ نئی افادیت بھی ثابت کی ہیں جیسا کہ:

شہد

عام استعمال: کھانسی میں آرام اور گلے کی خراش کے خاتمے کے لیے

نیا استعمال: سعودی عرب میں ہونے والی ایک تحقیق میں لوگوں نے پایا کہ دیگر طریقوں کے مقابلے میں شہد لگانے سے زخم میں تکلیف بھی کم ہوئی اور وہ جلد بھر بھی گیا۔ تحقیق میں چند لوگوں نے شہد کا استعمال کیا اور کچھ نے روایتی مرہم وغیرہ۔ دو دن بعد شہد لگانے والے لوگوں کی تکلیف مکمل طور پر ختم ہو چکی تھی جبکہ دیگر علاج کرنے والے افراد کو ٹھیک ہونے میں آٹھ دن لگے۔


لیموں کا رس

روایتی استعمال: بالوں کو رنگنے کے لیے

نیا استعمال: گردے کی پتھری سے بچاؤ کے لیے۔ بالوں کے کچھ حصوں کو ہلکا رنگ دینے کے لیے استعمال ہونے والے لیموں کے وہی اجزاء، یعنی سِٹرک ایسڈ، کیلشیم کے اخراج کو کم کرتے ہیں اور گردوں میں پتھری بننے کے امکانات بھی گھٹاتے ہیں۔ اگر آپ کو اس پریشانی کا سامنا ہے تو پانی میں لیموں کا رس ملائیں اور (بغیر چینی کے) روزانہ استعمال کریں ۔


جو کا دلیہ

روایتی استعمال: جلد کے امراض سے بچاؤ کے لیے

نیا استعمال: دل کی صحت کے لیے فائدہ مند۔ مغرب میں سالہا سال سے جو کے دلیے کا استعمال جلد کے امراض سے بچنے کے لیے گھریلو علاج کے طور پر کیا جاتا رہا ہے، جیسا کہ ایکزیما وغیرہ کے لیے۔ لیکن صرف جلد کی حفاظت ہی نہیں بلکہ جو میں خاص ریشے، بیٹا گلوکن بھی ہیں جو خطرناک LDL کولیسٹرول کی سطح گھٹانے میں بھی مددگار ثابت ہوئے ہیں۔ LDL کی سطح جسم میں بڑھ جائے تو دل کے امراض کا خطرہ بڑھ جاتا ہے، اس لیے جو کے دلیے کا روزانہ استعمال کولیسٹرول کو کم کرنے اور ساتھ ہی دل کے امراض کے خطرے کو گھٹانے میں مددگار ہو سکتا ہے۔


دودھ

روایتی استعمال: ہڈیاں مضبوط کرنے کے لیے

نیا استعمال: PMS علامات میں کمی کے لیے۔ دودھ اور اس کی مصنوعات اور گہرے سبز پتوں والی سبزیاں استعمال سے حیض سے قبل ہونے والی مختلف پریشانیوں (PMS) سے بچا جا سکتا ہے، جیسا کہ اپھارا، شدید بھوک، سر درد اور چڑچڑاپن۔ ایک حالیہ تحقیق نے ظاہر کیا کہ دو ماہ تک روزانہ 500 گرام کیلشیم لینے والی خواتین میں عام عورتوں کے مقابلے میں PMS علامات میں کمی دکھائی دی۔


کیلا

عام استعمال: اسہال (دست) کے خاتمے کے لیے

نیا استعمال: گردے کی صحت کے لیے۔ غذا کے ذریعے علاج کرنے والے افراد اسہال یعنی دست کے مرض میں کیلے کا استعمال بہت مفید قرار دیتے ہیں اور درحقیقت ایسا ہے بھی۔ پوٹاشیم سے بھرپور یہ خوراک نہ صرف پیٹ کو ٹھیک کرنے میں مدد دیتی ہے بلکہ اس کی یہی صلاحیت گردوں کی صحت کے لیے بھی مفید ہے۔


بیکنگ سوڈا

روایتی استعمال: سینے کی جلن میں آرام کے لیے

نیا استعمال: جوڑوں کی تکلیف۔ سوڈیم بائی کاربونیٹ، جسے ہم بیکنگ سوڈا کہتے ہیں ، گھریلو ٹوٹکوں میں سب سے حیران کُن چیز ہے۔ آپ اسے دانتوں کی صحت اور بدبو کے خاتمے کے لیے بھی استعمال کر سکتے ہیں لیکن ایک نئی تحقیق نے اسے جوڑوں کی تکلیف میں بھی آرام دہ پایا ہے۔


نارنجی

روایتی استعمال: نزلے کے خاتمے کے لیے

نیا استعمال: کولیسٹرول کم کرنے کے لیے۔ نارنجیوں میں موجود وٹامن C کو ویسے تو نزلے زکام سے بچنے کے لیے بہترین طریقہ علاج سمجھا جاتا رہا ہے لیکن اس دعوے کو ابھی تک سائنسی طور پر تسلیم نہیں کیا گیا۔ البتہ ایک تحقیق میں یہ ضرور پایا گیا ہے کہ یہ کولیسٹرول کو کم کرنے کے لیے فائدہ مند ضرور ہے۔ ماہرین کے مطابق حل پذیر ریشے کی حامل خوراک کا استعمال نقصان دہ LDL کولیسٹرول کی سطح کم کرنے میں مدد دے سکتا ہے، جس سے جسم میں کولیسٹرول کی مجموعی طور پر بھی کم ہوتی ہے۔


کافی

روایتی استعمال: چُستی کے لیے

نیا استعمال: دورے کو روکنے کے لیے۔ نئی تحقیق نے اس روایتی مشروب کو دل کی صحت کے لیے مفید قرار دیا ہے، جن میں دورے سے بچاؤ بھی شامل ہے۔ ایک تحقیق کے مطابق روزانہ کی بنیاد پر کافی کا استعمال دورے کے خدشے کو 20 فیصد تک گھٹا سکتا ہے جبکہ ایک اور تحقیق نے روزانہ کافی کے دو کپ پینے والی خواتین میں اس خطرے کو 25 فیصد تک کم پایا ہے۔ گو کہ ماہرین کہتے ہیں کہ اس کا سبب معلوم نہیں لیکن ہو سکتا ہے کہ کافی سوزش اور انسولین مزاحمت پر بھی اثرات رکھتی ہو۔


پودینہ

روایتی استعمال: ہاضمہ اور منہ کی بدبو کے لیے

نیا استعمال: یادداشت اور ذہن کو بہتر بنانے کے لیے۔ پودینے کو ہزاروں سالوں سے منہ کی بدبو کے خاتمے کے لیے بہترین گھریلو علاج سمجھا جاتا ہے جبکہ یہ ہاضمے میں بھی مدد دیتا ہے۔ لیکن پودینے کو سونگھنے سے دماغ تازہ دم ہو جائے گا، یہ شاید آپ نے سوچا بھی نہ ہو۔ سائنس دانوں نے پایا ہے کہ پودینے کی چائے پینے سے یادداشت اور ذہن بہتر ہوتا ہے۔ برطانیہ کی نارتھمبریا یونیورسٹی کی تحقیق کے مطابق جو افراد پودینے کی چائے استعمال کرتے ہیں وہ زیادہ بہتر یادداشت رکھتے ہیں اور اپنے دیکھے گئے زیادہ الفاظ اور تصاویر یاد کرنے کے قابل تھے۔


ادرک

روایتی استعمال: متلی میں آرام

نیا استعمال: خون میں شوگر کی سطح میں کمی۔ دورانِ حمل متلاہٹ کے لیے کارآمد سمجھی جانے والی ادرک ذیابیطس کے شکار یا اس کے خطرے سے دوچار افراد کے لیے بھی مددگار ہے۔ ایک ایرانی تحقیق میں 12 ہفتے تک روزانہ 2 گرام ادرک پاؤڈر کا استعمال کرنے کرنے والے مختلف افراد کے خون میں شوگر اور چربی کی سطح میں دیگر افراد کے مقابلے میں کمی پائی گئی۔


کھیرا

عام استعمال: آنکھوں کے حلقے ختم کرنے کے لیے

نیا استعمال: ذیابیطس میں کمی کے لیے۔ ٹھنڈے کھیرے آنکھوں کے گرد حلقوں کے خاتمے کے لیے عرصہ دراز سے استعمال کیے جا رہے ہیں لیکن یاد رکھیں دراصل یہ بہت فائدے رکھنے والی سبزی ہے۔ اس میں موجود کافی ریشے اور بہت کم حرارے (کیلوریز) ذیابیطس کے حامل افراد کے خون میں شوگر لیول کو کم کرنے میں مددگار ہو سکتی ہے۔

فیس بک پر تبصرے



تبصرہ کریں